Supreme Court Verdict on Senate Elections | Who won & Who Lost? | Mansoor Ali Khan

#MansoorAliKhan #SupremeCourt #SenateElections

Mansoor Ali Khan is an Anchorperson of the Current Affairs program ‘To the Point with Mansoor Ali Khan’, one of the most hard hitting show on Pakistani news channels.
On Monday – Tuesday – Wednesday at 8 pm on Express News Pakistan.

Facebook:
Twitter:
Instagram:
YouTube:


source

Related articles

Comments

  1. ہمیں یہ بھی نہیں پتہ چل رہا کہ معزز عدالت نے فیصلہ دیا ہے یا رائے دی ہے

  2. Mansor sir vot censal hone wali bat senytar pheli dafa vot dalne jare hn Kia hokumat ka mukaf thik ha

  3. میرے منصور کی میرے کپتان کے کھلاڑی شہباز گل سے ہونے والی نوک جھونک سے میں کافی لطف اندوز ہوا 🙈😍😀

  4. Just to be clear judiciary is meant to follow constitution of the country and no matter what they suggest any changes but that has to be amended in constitution. Court in this matter can only suggest but can’t dictate so it’s the waste of time for the country court

  5. Sc did not hold its jurisdiction
    Sc should go to the to it's function. It has enhanced confision

  6. Supreme Court has failed to give the right judgment, I think that secret ballot isn’t the right way as people can also take bribes and sell their vote

  7. فیصلہ
    پاکستان کی ایک پرانی پنجابی فلم کا منظر

    شاہد مظہر شاہ گاؤں کا چوہدری ہوتا ہے

    اسی گاؤں کی ایک بوڑھی لیکن بچوں والی بیوہ عورت (اس صورت حال میں عمران) ہوتی ہے جسکا گھر گاؤں کے ایک متوسط طبقے کے چھوٹے ذمیندار (اس صورت حال میں زرداری) کے قدرے بڑے اور خوشحال گھرانے کے گھر کے ساتھ ہوتا ہے۔

    سین شروع ہوتا ہے

    عورت روتی ہوئی دکھی حالت میں چوہدری کے پاس آتی ہے اور کہتی ہے

    چوہدری صاحب ، بیوہ ہوں ، غریب ہوں چھوٹے بچے ہیں ، کوئی مالی مدد نہی کرتا۔ کوئی ہنر نہی ہے میرے پاس ۔ بچوں کی روزی روٹی کی خاطر اپنے گھر کے آگے ایک چھوٹی سی بھٹی لگانا چاہتی ہوں دانے اور چھولے وغیرہ بھون کر بیچنے سے کچھ آمدن ہو جائے گی ، اور باعزت طریقے سے بچوں کا پیٹ پال لوں گی۔اگر آپ اجازت دیں تو میں بھٹی لگا لوں ؟

    چوہدری کہتا ہے ! ہاں ہاں نیکی کا کام ہے ، باعزت طریقے سے روزی روٹی کمانے کی تو اجازت ہمارا دین بھی دیتا ہے ، جاؤں اور بھٹی لگاؤ اور اپنے بچوں کا پیٹ باعزت طریقے پالو

    سین بدلتا ہے
    اس بیوہ کا متوسط ہمسایہ چوہدری کے پاس آتا ہے ، بیوہ کی شکائیت لگاتے ہوئے کہتا ہے

    چوہدری صاحب! اس بیوہ نے میرے گھر کے ساتھ اپنے گھر میں بھٹی لگا لی ہے ، جس سے دھواں اٹھتا ہے ، میرے گھر دھواں آتا ہے ، رہنا دوبر ہوا ہوا ہے ، سارا گھر پرشان ہے، کیا کروں؟

    چوہدری کہتا ہے بھٹی گرا دو

    متوسط ہمسایہ جاتا ہے اور بھٹی گرا دیتا ہے

    سین بدلتا ہے

    عورت روتی ہوئی آتی ہے اور کہتی ہے

    چوہدری صاحب ! میری مجبوری تو آپ جانتے ہیں ، آپ کے حکم سے بھٹی لگائی تھی ، لیکن ظالم ہمسائے نے ا کر گرا دی۔ بم تو بھوکے مر گے ہیں ، اب کیا کریں؟
    چوہدری کہتا ہے ! تو بھٹی دوبارہ لگا لو

    پھر سین بدلتا ہے

    متوسط ہمسایہ بھاگتا ہوا چوہدری کے پاس آتا ہے اور پھر وہی رونا روتا ہے ۔ چوہدری مشورہ دیتا ہے تم دوبارہ گرا دو۔ وہ جاتا ہے اور دوبارہ بھٹی گرا دیتا ہے۔

    دو دفعہ یہی سین دھرایا جاتا ہے

    پھر آخری سین آتا ہے جس میں دونوں اکھٹے چوہدری کے سامنے کھڑے ہوتے ہیں ۔
    ۔بیوہ اپنا دکھڑا سناتی ہے ، چودری کہتا ہے ! بات تو تمھاری درست ہے ، تم بھٹی بنا لو

    متوسط ہمسایہ کہتا ہے ، چوہدری صاحب ! میرے گھر دھواں آتا ہے اسکا کیا کروں ؟ ، چوہدری کہتا ہے ، تم بھٹی گرا دو

    گاؤں کے دو چار لوگ اور بھی دیکھ رہے ہوتے ہیں یہ ماجرہ ، وہ کہتے ہیں ،
    چوہدری صاحب ! انکا مسلہ حل کریں ، یہ کیا کہ تم بنا لو ، اور تم گرا دو !

    چویدری کہتا ہے ! انکا مسلہ حل کر دیا تو میرے پاس کون آئے گا ؟ مجھے چوہدری کون کہے گا؟

    سیکرٹ بھی ہو جائے۔
    ٹیکنالوجی کا ستعمال بھی ہو جائے ، بوقت ضرورت ٹریس بھی ہو جائے۔

    کل کو بیوہ اور متوسط ہمسایہ چوہدری کے آگے کھڑے ہوں گے،

    الیکشن کمیشن دیکھ رہا ہو گا اور پکارے گا ،
    چوہدری صاحب ! انکا مسلہ حل نہی ہوا ، مسلہ حل کریں

    چویدری صاحب کہیں گے

    تے فیر سانوں چوہدری کون کہے گا؟ ساڈے کول کون آئے گا؟

    🙏🙏🙏

  8. Ha ha ha. Ayhthay rakh. Wah judgement is in favour for both of the side.
    There is darkness and may be no darkness….. Karwao ab election…. Ha ha ha.

  9. سپریم کورٹ کے ججز کو یہ کیس سماعت کے لیٸے مسترد کر دینا چاھیۓ تھا

  10. سپریم کورٹ کے اس فیصلے کو بھی یوتھیے اپنی جیت تصور کررہے ہیں۔ اب ان کو کون بتائے کہ باپ صبح سویرے روزگار کی تلاش میں جاتا ہے اور مزدوری نہ ملنے کے بعد بچارہ مایوس ہو کر گھر چلا جاتا ہے

  11. پاکستان بنن توں تھوڑے ویلے دے اندر ای " ملٹری – ملان – جج کٹھ جوڑ" یعنی "جرنیل(ایوب خان) ، جج(جسٹسں منیر) تے ملاں (مودوی) دا کھڈ جوڑ" عوامی جمہوری (ریاست) دے قیام وچ وڈی رکاوٹ بنڑ کے سامنے ایا-
    خاص طور تے جسٹس منیر دا "doctrine of necessity"
    (عرف نظریہ ضرورت) نے ایس کھڈ جوڑ دا باقاعدہ آغاز کیتا-
    ایس (نام نہاد) "نظریے" نے ریاست دی سمت ای بدل دتی- (جس دے نتیجیاں نوں اسی اج وی بگتدے پیں آں-)

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Share article

Latest articles

Newsletter

[tdn_block_newsletter_subscribe description=”U3Vic2NyaWJlJTIwdG8lMjBzdGF5JTIwdXBkYXRlZC4=” input_placeholder=”Your email address” btn_text=”Subscribe” tds_newsletter2-image=”753″ tds_newsletter2-image_bg_color=”#c3ecff” tds_newsletter3-input_bar_display=”row” tds_newsletter4-image=”754″ tds_newsletter4-image_bg_color=”#fffbcf” tds_newsletter4-btn_bg_color=”#f3b700″ tds_newsletter4-check_accent=”#f3b700″ tds_newsletter5-tdicon=”tdc-font-fa tdc-font-fa-envelope-o” tds_newsletter5-btn_bg_color=”#000000″ tds_newsletter5-btn_bg_color_hover=”#4db2ec” tds_newsletter5-check_accent=”#000000″ tds_newsletter6-input_bar_display=”row” tds_newsletter6-btn_bg_color=”#da1414″ tds_newsletter6-check_accent=”#da1414″ tds_newsletter7-image=”755″ tds_newsletter7-btn_bg_color=”#1c69ad” tds_newsletter7-check_accent=”#1c69ad” tds_newsletter7-f_title_font_size=”20″ tds_newsletter7-f_title_font_line_height=”28px” tds_newsletter8-input_bar_display=”row” tds_newsletter8-btn_bg_color=”#00649e” tds_newsletter8-btn_bg_color_hover=”#21709e” tds_newsletter8-check_accent=”#00649e” tdc_css=”eyJhbGwiOnsibWFyZ2luLWJvdHRvbSI6IjAiLCJkaXNwbGF5IjoiIn19″ embedded_form_code=”YWN0aW9uJTNEJTIybGlzdC1tYW5hZ2UuY29tJTJGc3Vic2NyaWJlJTIy” tds_newsletter1-f_descr_font_family=”521″ tds_newsletter1-f_input_font_family=”521″ tds_newsletter1-f_btn_font_family=”521″ tds_newsletter1-f_btn_font_transform=”uppercase” tds_newsletter1-f_btn_font_weight=”600″ tds_newsletter1-btn_bg_color=”#dd3333″ descr_space=”eyJhbGwiOiIxNSIsImxhbmRzY2FwZSI6IjExIn0=” tds_newsletter1-input_border_color=”rgba(0,0,0,0.3)” tds_newsletter1-input_border_color_active=”#727277″ tds_newsletter1-f_descr_font_size=”eyJsYW5kc2NhcGUiOiIxMiIsInBvcnRyYWl0IjoiMTIifQ==” tds_newsletter1-f_descr_font_line_height=”1.3″ tds_newsletter1-input_bar_display=”eyJwb3J0cmFpdCI6InJvdyJ9″ tds_newsletter1-input_text_color=”#000000″ tds_newsletter1-input_border_size=”eyJwb3J0cmFpdCI6IjEifQ==”]